توشہ خانہ کیس، 1990تا2001 تک کا ریکارڈ پبلک کرنے کا تحریری فیصلہ جاری

 لاہور ہائیکورٹ میں توشہ خانہ کیس کا 1990تا2001 تک کا ریکارڈ پبلک کرنے کا تحریری فیصلہ جاری، تحائف رضاکارانہ ڈکلیئر نہ کرنے والوں کے خلاف فوجداری ایکشن ہوسکتا ہے۔ لاہور ہائیکورٹ نے توشہ خانہ کیس کا 1990سے 2001 تک کا ریکارڈ پبلک کرنے کا تحریری فیصلہ جاری کردیا ہے، حکومت عدالتی حکم کی مصدقہ نقل کے 7دن میں توشہ خانہ کا ریکارڈ پبلک کرے۔حکومت 1990 سے 23 مارچ 2023 تک تحائف دینے والوں کا نام بھی 7 روز میں پبلک کرے۔ تحریری فیصلے میں کہا گیا کہ تحائف کی ملکیت حکومت کے پاس ہوتی ہے، یہ تب تک حکومت کے پاس ہوتے ہیں جب تک انہیں لینے کا طریقہ نہ اختیار کیا جائے۔ تحائف کا چھپانا یا اس کی قیمت ادا نہ کرنا غلطی ہے جو خرابی کی رغبت دیتی ہے ۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top